First National Anthem

Pakistan’s First National Anthem
Commissioned by Mohammad Ali Jinnah
Written by Jagan Nath Azad
Translation: Shoaib Nir

THE ANTHEM

O, Land of the Pure

The grains of your soil are glowing today
Brighter than the stars and the Milky Way
Awe-struck is the enemy by your will-power
Open wounds are sewn, we’ve found a cure

O, Land of the Pure…

New paths of progress, we resolve to tread
Proudly, our nation stands with a high head
Our flag is aflutter above the moon and the stars
As planets look up to us be it Mercury or Mars
No harm will now come from anywhere, for sure

O, Land of the Pure…

The nation has tasted success at last
Now the Freedom Struggle is a thing of the past
The wealth of our country knows no bounds
For us are its benefits and bounty all around
Of East and West, we have no fear

O, Land of the Pure…

Change has become the order of the day
No-one is a slave in the nation today
On the road to progress, we’re swiftly going along
Independent and fortunate, happy as a song
Gloomy winds are gone, sweet freedom’s in the air

O, Land of the Pure…

The grains of your soil are glowing today
Brighter than the stars and the Milky Way

image

پاکستان کا پہلا قومی ترانہ “جگن ناتھ آزاد” نے! محمد علی جناح کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے لکھا جو قریبا ڈیڑھ سال تک سماعت ہوتا رہا، پھر اس ترانے کو اسلئے مسترد کیا گیا کہ جگن ناتھ آزاد ہندو تھے

پہلا قومی ترانہ آپ کی خدمت میں پیش ھے

اے سرزمینِ پاک !
ذرے تیرے ہیں آج ستاروں سے تابناک
روشن ہے کہکشاں سے کہیں آج تیری خاک
تندیِ حاسداں پہ ہے غالب تیرا سواک
دامن وہ سل گیا ہے جو تھا مدتوں سے چاک
اے سرزمینِ پاک!

اب اپنے عزم کو ہے نیا راستہ پسند
اپنا وطن ہے آج زمانے میں سربلند
پہنچا سکے گا اسکو نہ کوئی بھی اب گزند
اپنا عَلم ہے چاند ستاروں سے بھی بلند
اب ہم کو دیکھتے ہیں عطارد ہو یا سماک
اے سرزمینِ پاک!

اترا ہے امتحاں میں وطن آج کامیاب
اب حریت کی زلف نہیں محو پیچ و تاب
دولت ہے اپنے ملک کی بے حد و بے حساب
ہوں گے ہم اپنے ملک کی دولت سے فیضیاب
مغرب سے ہم کو خوف نہ مشرق سے ہم کو باک
اے سرزمینِ پاک!

اپنے وطن کا آج بدلنے لگا نظام
اپنے وطن میں آج نہیں ہے کوئی غلام
اپنا وطن ہے راہ ترقی پہ تیزگام
آزاد، بامراد، جواں بخت شادکام
اب عطر بیز ہیں جو ہوائیں تھیں زہرناک
اے سرزمینِ پاک!

ذرے تیرے ہیں آج ستاروں سے تابناک
روشن ہے کہکشاں سے کہیں آج تیری خاک
اے سرزمینِ پاک!

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: